Urdu

ایک سکھ جوان نے کیسے مسلمان جوان کی جان ہندو سے بچائی

خود کو سکیو لر ملک قرار دینا  والے بھارت کے شہری ایسا کوئی موقع ہاتھ سے جانے نہیں دیتے جس میں بھارت کا اصل چہرہ دنیا کے سامنے آرہا ہو اور خود ہی یہ لوگ اپنے م،لک کے چہرے پر گندگےٓی انڈیلتے رہتے ہیں لیکن آج ہم بات کر رہے ہیں ایک ایسا بھارتی کی جو کہ سکھ ہے اور اس نے جان پر کھیلتے ہوئے مشتعل ہندو ہجوم کے ہاتھوں ایک مسلمان کی جان بچائی جسے  دنیا والے ہیرو قرار دے رہے ہیں ۔اس کا تعلق پنجاب پولیس سے ہے اور اس کی ڈیوٹی اس مندر کے قریب تھی جس میں یہ واقعہ پیش آیا

افسر گَگن دیپ سنگھ کو ریاست کے علاقے رام نگر میں معروف مندر کے قریب حالات کشیدہ ہونے پر طلب کیا گیا، جہاں ایک گروپ مسلم نوجوان کو اس کی ہندو دوست کے ساتھ دیکھے جانے پر تشدد کا نشانہ بنا رہا تھا۔رپورٹس کے مطابق ہندوتوا نظریات کے حامی کارکنان نے دونوں کو زد وکوب کرنا شروع کیا۔ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مسلم نوجوان کے اطراف میں مشتعل اور نعرہ لگاتا ہجوم موجود ہے اور پولیس افسر نوجوان کو ہجوم کے تشدد سے بچانے کی کوشش کر رہا ہے۔جب ہجوم نے نوجوان پر تشدد کی کوشش کی تو گگن دیپ سنگھ کو نوجوان کو بچانے کے لیے خود کو آگے کرتے دیکھا گیا۔جب پولیس افسر کی ہمت و بہادری کی وجہ سے مشتعل ہجوم مسلم نوجوان کو تشدد کا نشانہ بنانے میں ناکام رہا تو اس نے پولیس کے خلاف نعرے لگانے شروع کر دیئے۔

ان کا کہنا تھا کہ ’نوجوان کو ہجوم سے بچاتے وقت میں بلکل خوفزدہ نہیں تھا، مجھے بس نوجوان کے تحفظ کی فکر تھی، کسی کے پاس کوئی حق نہیں تھا کہ وہ اس پر تشدد کرے، جبکہ اگر نوجوان مسلم کی بجائے ہندو یا کوئی اور بھی ہوتا تب بھی میں یہی کرتا۔‘اس سکھ کی فرض شناسی اور انسان دوستی کو خوب سراہا جا رہاہے اور لوگوں کا مطالبہ ہے کہ اس کو اس کی بہادری کے بنا پر ترقی دی جائے اور اعلی حکومتی ایوارڈ سے نوازا جائے اور اس کے ساتھ جن لوگوں نے اس ہجوم کو مشتعل کیا ہے ان کو فورا سزا دی جائے

Comments

comments

ایک سکھ جوان نے کیسے مسلمان جوان کی جان ہندو سے بچائی
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top