Urdu

حضرت عائشہ نے کن عورتوں کے بارے میں ارشاد فرمایا ہے کہ ان سے بلا تا خیر شادی کر لو

حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا بنت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ نبی اکرم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی کم عمر ترین زوجہ تھیں۔آپ کا لقب صدیقہ اور کنیت ام عبداللہ ہے۔ نکاح کے وقت آپ کی عمر کے متعلق مختلف روایات موجود ہیں۔ بعض واقعات سے ایسا لگتا ہے کہ رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے نکاح کے وقت آپ کی عمر محض چھ سال کی تھی

لیکن تحقیق سے معلوم ہوتا ہے کہ ایسی بات نہیں بلکہ نکاح کے وقت آپ کی عمر سترہ سال کے لگ بھگ تھی۔ اس کی تصدیق یوں ہوتی ہے کہ آپ اپنی بہن مزید تفصیل جاننےکے لئے نیچے ویڈیو پر کلک کریں اور مکمل دیکھیں

ہ آپ اپنی بہن حضرت اسماء رضی اللہ عنہا سے دس سال چھوٹی تھیں۔ ہجرت کے وقت حضرت اسماء رضی اللہ عنہا کی عمر 27 برس تھی۔ اس طرح نکاح کے وقت حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی عمر 17 سال بنتی ہے۔آپ کے رسولِ پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے نکاح سے عرب میں ایک اور بدعت کا خاتمہ ہوا۔ حضرت ابو بکر صدیق رضی اللہ عنہ نبی اکر م صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے حقیقی بھائی نہ تھے بلکہ دینی بھائی تھے۔

عرب میں اس دور میں دینی بھائی کی اولاد کے ساتھ شادی کرنے کا رواج نہ تھا۔ چنانچہ جب حضرت ابوبکر صدیق رضی اللہ عنہ کے سامنے ایک خاتون نے اس رشتے کی بات کی تو انہوں نے حیرانگی سے پوچھا کہ کیا بھتیجی کے ساتھ نکاح جائز ہے؟ اس پر رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی طرف سے یہ جواب آیا کہ نسبی بھائی کی بیٹی حرام ہے لیکن دینی بھائی کی بیٹی حرام نہیں ہے۔

رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کی شادی کی تجویز ایک خاتون خولہ رضی اللہ عنہا بنت حکیم نے دی۔ رسول پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم حضرت خدیجہ رضی اللہ عنہا کی وفات کے بعد غمگین رہتے تھے تو خولہ رضی اللہ عنہا نے آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا رشتہ چلانے کی بات کی۔ اجازت ملی تو انہوں نے بات آگے چلائی۔

اس وقت حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کے رشتہ کی بات کہیں چل رہی تھی لیکن اللہ نے حضرت عائشہ رضی اللہ عنہا کا نکاح رسولِ پاک صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے ساتھ لکھ دیا تھا ،اس لئے ایسا ہی ہوا۔

Comments

comments

حضرت عائشہ نے کن عورتوں کے بارے میں ارشاد فرمایا ہے کہ ان سے بلا تا خیر شادی کر لو
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top