Urdu

خاتون جج نے فیصلہ کر کے دھاندلی کرنے والوں کی چھٹی کر دی

یہ خبر سامنے آئی تھی کہ سابقہ حکومت نے قومی اسمبلی کی مدد سے ایک نیا الیکشن فارم تجویز کیا تھا اور اسے منظور بھی کر لیا گیا تھا جس میں آئین کی بنیادی شقوں کو نکال دیا گیا تھا ۔ اس میں 62 ، 63 کی شق ختم ہو گئی تھی جس کے مطابق کوئی بھی شخص چاہے کسی طرح کا کردار رکھتا ہو اور چاہے وہ ایک جرائم پیشہ ہی کیوں نہ ہو وہ الیکشن  میں حصہ لے سکتا ہے ، ایسے ہی پرانے فارم کے اندر ہر ایک کو اس بات کی ضرورت تھی کہ وہ یہ کلئیر کریں کہ وہ کسی اور ملک کا شہری نہیں ہے اور  نہ ہی اس کے پاس دہری شہریت ہے ۔

لیکن موجودہ بل میں اس شق کو بھی نکال دیا گیا ۔ اب اس کے بعد دہری شہریت رکھنے والا بھی الیکشن میں حصہ لے سکتا ہے ،۔ اس کے ساتھ اپنے اثاثے ظاہر کرنے اور  اپنا ٹیکس نمبر بنانے کی ضرورت کو بھی ختم کر دیا گیا ۔مطلب اثاثے ظاہر کرنے کی ضرورت نہیں اور نہ ہی الیکشن کمیشن کو بتانے کی ضرورت ہے کہ اس نے ٹیکس دیا کہ نہیں اور دیا ہے تو کتنا ٹیکس ادا کیا ہے ۔ اس کے ساتھ یہ شق بھی ختم کی گئی کہ اس کی تعلیم کتنی ہے اور پیشہ کیا اور اس کے ساتھ یہ بھی کالم حذف کر دیا گیا جس میں اس کے متعلقین کی تفصیل درج

ہوتی  ہے ۔ یہ تمام تبدیلیاں کی گئی لیکن کسی کو اس کا علم نہیں تھا ۔ ایک نجی چینل کی طرف سے مقدمہ دائر کیا گیا جس کو جسٹس عائشہ ملک کی عدالت میں اس کی سماعت ہوئی ۔ انہوں نے سماعت کرنے کے بعد فیصلہ دیا کہ بل میں کی گئی تبدیلیوں کو کالعدم قراردیا گیا ہے اس لئے الیکشن کمیشن پہلے فارم کو ہی بحال کریں ۔ اس فیصلہ کو سماجی رہنماؤں سمیت کافی لوگوں نے سراہا ہے اور کہا کہ الیکشن کی شفافیت کے لئے یہ اقدام بے حد ضروری تھا

Comments

comments

خاتون جج نے فیصلہ کر کے دھاندلی کرنے والوں کی چھٹی کر دی
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top