Urdu

صحافی نے ایسا کیا کہا کہ عمراں خان اٹھ کر نماز پڑھنے لگ گئے

عمران خان کے بارے میں بہت سارے لوگوں کے منفی خیالات ہیں ٓلیکن وہی کافی سارے لوگ ایسے ہیں جن کو عمراں خان پاکستان کے واحد سہارے کےطور ؎پر نظر آتے ہیں اور جوان ان کو مکمل سپورٹ کرتے ہیں ، ایک وقت تھا کہ عمران خان کی پارٹی کو ایک سے زیادہ نشستیں نہیں ملتی تھی  لیکن آج ہر پارٹی کا لوٹا ان کی پارٹی میں شامل ہونے جا رہا ہے ۔ اور ان کی

کوشش ہیں کہ مستقبل میں چونکہ عمران خان کی پارٹی کی جیت واضح ہے اس لئے اس موقع سے فائدہ اٹھایا جائے اور ان کی آنی والی حکومت سے لطف اندوز ہوا جا سکے ۔ عمران خان کی پاٹی کو خیبر پختون خواہ میں حکومت ملی جہاں ان کے کارکردگی کچھ بہتر رہی لیکن زمین حقائق سے زیادہ فیس بک پر ان کی تشہیر ہوتی رہی اور ایسے ایسے نادر نمونے سامنے آئے جس کا علم شاید عمران خان کو بھی نہ ہو ۔ اسٹیبلشمنٹ کی مکمل حمایت کے ساتھ اور عوام کی محبتوں کے ساتھ عمران خان 2018 کا الیکشن لڑنے جا رہے  ہیں ۔ اور انہیں امید ہے کہ

وفاق میں حکومت ان کی بن سکتی ہے ۔ ایک صحافی کہتے ہیں کہ ایک سردیوں کے شام میں ان کے ساتھ بیٹھا باتیں کر رہا تھا کہ اس دوران میں نے ان سے کہا کہ حضرت علی کرم اللہ وجہہ کا قول ہے کہ اگر اپنےقد کاٹ کو دیکھنا ہو تو اپنے مخلافین کے قد کاٹ کو دیکھیں ۔ آج آپ دیکھیں کہ آپ کے مخالفین میں نواز شریف اور زرداری آگئے ہیں میں نے اب اتنی ہی بات

کی تھی کہ وہ اٹھ گئے مصلی بچھایا اور اس پر نماز پڑھنے لگ گئے کیونکہ میرا اندازہ تھا کہ عصر کی نماز لیٹ ہونے والی ہے ۔ مجھے جان کر بہت خوشی ہوئی کہ لوگ جس کے بارے میں ایسی منفی باتیں کرتے ہیں وہ خود کتنا نماز کا پابند ہے

Comments

comments

صحافی نے ایسا کیا کہا کہ عمراں خان اٹھ کر نماز پڑھنے لگ گئے
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top