Urdu

لاکھوں سال پرانے غآر کی دریافت اندر سے سائنس دانوں کو کیا ملا

سائنس دانوں نے ایک غار دریافت کیا ہے جس کے بارے میں سائنس دانوں کا کہنا ہے کہ یہ غار تقریبا کئی لاکھوں کروڑوں سال پرانا ہے ۔ اور اس کی بلندی اتنی زیادہ ہے کہ اس میں اہرام مصر سما سکتا ہے ۔ اور اگر فٹبال گراونڈ اس میں بنائے جائے تو اس میں  22 فٹ بال گراونڈ بنائے  جاسکتے ہیں جب کہ اس کا مجموعی حجم 32 کروڑ مربع فٹ ہے ۔ اس کے اندر صاف

نیلگو پانی ہے اور اس کے علاوہ اس کا اپنا ہی ایک الگ بادلوں کا نظام ہے اس کے ساتھ اس میں پہاڑیاں بھی ہے اور ساحل بھی بنے ہوئے ہیں ۔ہ غار صوبہ بوئی زو کے زیون گیتو ہی نیشنل پارک میں واقع ہے۔گزشتہ ماہ پہلی بار سائنسدان اس کی گہرائیوں میں اترے اور اندرانی مناظر کی ویڈیو بنائی۔غار کی ایک طرف بڑا سا ہول ہے جس سورج کی روشنی اندر

آتی ہے اور اندر کا نظار انتہائی دلکش ہو جاتا ہے ۔ عالمی شہرت یافتہ ادارے نیشنل جیوگرافک سوسائٹی کی مدد سے برطانوی ماہرین نے پہلی بار اس غار کا سراغ لگایا تھا  یہ غار چائنہ کے نیشنل پارک میں ہیں جس کو ایک انگریز سیاح نے دریافت کیا تھا لیکن اس کی ویڈیو آور تصاویر حال میں سامنے آئی ہے  ۔

Comments

comments

لاکھوں سال پرانے غآر کی دریافت اندر سے سائنس دانوں کو کیا ملا
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top