Urdu

نواز شریف کو اڈیالہ جیل جب کہ حسن اور حسین کو انٹرپول کے ذریعے واپس لایا جائے گا

ایک ہفتے کے اندر کیس کو نمٹانے کے بعد نواز شریف ، ان کے داماد کیپٹن صفدر اور ان کے بیٹوں کی سزا کنفرم ہے ۔ اہم خبر سامنے آ گئی ۔

تفصیلات کے مطابق اس وقت عدالت میں پاکستان کے سابق وزیر اعظم  ان کے داماد کیپٹن صفدر اور ان کے دونوں بیٹوں حسن اور حسین نواز کے خلاف مقدمات کو تیزی سے نمٹایا جا رہا ہے اور جس طرح کے شواہد پیش کئے جارہے ہیں اس سے محسوس ہوتا ہے کہ ان کے گرد گھیرا تنگ کر دیا  گیا ہے اور بہت جلد ان کو سزا دی جائے گی ۔ اس کے بعد ان کو کسی ریسٹ ہاوس میں نہیں بلکہ اڈیالہ جیل میں منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ سوال یہ پیدا ہوتا  ہے کہ آخر ایک لاکھوں دیگر اہم فیصلوں کو چھوڑ  کر ایک خاص پارٹی کو کیوں کر نشانہ بنایا

جا رہا ہے ۔ اس سے واضح طور پر دکھائی دے رہا ہے کہ ہماری اسٹیبلشمنٹ اور عدلیہ ایک سائیڈ پر رہ کر ایک مخصوص پارٹی کو لانے کے لئے مصروف ہے ۔ کہا جا رہا ہے کہ حسن اور حسین نواز  جو کہ اس وقت پاکستان میں موجود نہیں ہے ان کو بھی سزا کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے اور اگر ان کو سزا ہوئی تو انہیں پاکستان لانے کے لئے انٹرپول کا استعمال کیا جائے گا ہ

بھی پتہ چلا ہے کہ وفاق میں نگراں حکومت کے قیام کے بعد 25 بیورو کریٹس اور دو سابق وفاقی وزرا کی گرفتاری متوقع ہے۔ اس کے ساتھ کوشش کی جارہی ہے کہ سابقہ حکومت کی طرف سے اعلان کردہ تاریخ سے انتخابات کو موخر کیا جائے ۔ جو کسی بھی صورت میں ملکی سالمیت اور جمہوری عمل کے لئے مناسب نہیں

Comments

comments

نواز شریف کو اڈیالہ جیل جب کہ حسن اور حسین کو انٹرپول کے ذریعے واپس لایا جائے گا
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top