Urdu

چینی ماہرین نے پاؤں کے متعلق عجیب تفصیلات بتا دی پڑھیے اس رپورٹ میں

ماہرین کےمطابق ہمارا پاؤں ہماری صحت کے متعلق بہت ساری معلومات مہیا کرتا ہے ایسے ہی پاؤں کے ذریعے کسی کی ذات اور شخصیت کے متعلق جاننے کا فن بھی صدیوں سے چلا آرہا ہے چینی ماہرین اسے شخصیت کا آئینہ بھی کہتے ہیں۔ان کا خیال ہے جب ہمارے جسم میں کہیں دردیا کوئی اور مسئلہ ہوتا ہے تو وہ ہمارے پاﺅں کے ذریعے ہی سامنے آنے لگتا ہے۔آئیے آپ کو بھی بتاتے ہیں کہ اگر آپ کے پاﺅںکے انگوٹھے کے برابر والی انگلی دیگر انگلیوں سے لمبی ہے تو چینی ماہرین اس کے بارے میں کیا کہتے ہیں۔

چین کے طبی ماہریں کا کہنا ہے کہ اگر آپ کے پاﺅں کی ساخت ایسی ہوتو اس کا مطلب ہے کہ آپ میں قائدین کی خصوصیات موجود ہیں اور ایسے لوگ بہت زیادہ تخلیقی اور زبردست سوچ کے مالک ہوتے ہیں۔ایسے لوگ رہنما بن سکتے ہیں اوروہ کسی بھی مشکل صورتحال کو اپنے حق میں کرلیتے ہیں۔ایسے لوگ جن کی یہ انگلیاں چھوٹی ہوتی ہیں وہ بہت زیادہ صلح پسند اور سکون میں رہنا پسند کرتے ہیں۔ چینی ماہرین کا یہ بھی کہنا ہے کہ جن لوگوں کے پپروں کے انگوٹھے دیگرانگلیوں سے لمبے ہوں تو اس کا مطلب ہوتا ہے کہ آپ بہت زیادہ ذہین اور عقلمند ہیں۔جن کے پاس ہر مشکل کا حل ہوتا ہے

گلگت بلتستان، پاکستان کے انتہائی شمال میں واقع ایک خوبصورت علاقہ ہے جس کی حدود بیک وقت چین، بھارت، مقبوضہ کشمیر اور افغانستان سے ملتی ہیں۔ قدرتی حسن سے مالامال اس علاقے میں دنیا کے تین عظیم پہاڑی سلسلے یعنی قراقرم، ہمالیہ اور ہندوکش واقع ہیں جبکہ کے ٹو، راکاپوشی اور نانگا پربت (کلر ماؤنٹین) جیسے مشہور اور بلند پہاڑوں کی موجودگی اس علاقے کی جغرافیائی اہمیت کو مزید اجاگر کرتی ہے۔

گلگت بلتستان میں موجود تقریباً تمام آبادی مسلمان ہے جبکہ مکاتبِ فکر میں بریلوی اہلسنت، دیوبندی اہلسنت، اہلحدیث، اہل تشیع، امامیہ اسماعیلی، نور بخشی سمیت دیگر شامل ہیں۔ یہاں اقلیتوں میں عیسائی اور سکھ بھی کچھ تعداد میں موجود ہیں۔

جب ملک بھر میں فرقہ واریت کا تصور بہت ہی کم اور محدود تھا، اس وقت گلگت بلتستان فرقہ وارانہ فسادات کی وجہ سے مشہور تھا۔ ان فسادات میں جہاں کئی لوگ بیرونی سازشوں کے آلہ کار بنے رہے وہیں حکومتی پالیسیاں اور ریاستی رٹ کی کمزوری بھی فرقہ وارانہ فسادات کو بڑھاوا دینے کا سبب بنی رہیں جس کی وجہ سے سینکڑوں بے گناہ افراد لقمہ اجل بن گئے۔ معاشرتی زندگی کے پہلو کو یکسر نظر انداز کرتے ہوئے عدم برداشت کی بہت سی مثالیں یہاں موجود ہیں۔ فرقہ واریت کا موضوع یہاں اتنا ’عظیم‘ بن چکا تھا کہ کئی ذاتی جھگڑوں اور بدلوں کو فرقہ واریت کا رنگ دے کر ملزموں نے خود کو بچانے کی کوششیں بھی کیں۔
2015 تک گلگت بلتستان فرقہ واریت کے منہ میں رہا جبکہ اسی دوران 2009 میں وفاقی حکومت نے گلگت بلتستان کو ایک صدارتی آرڈیننس کے ذریعے صوبائی حیثیت دے دی جس کے بعد مقامی (صوبائی) حکومت نے امن و امان کی صورتحال بہتر بنانے کےلیے قانون سازی بھی کی۔ مختلف کمیٹیاں بناکر انہیں امن و امان کی صورتحال بہتر بنانے کا ٹاسک دیا گیا جو اہلسنت اور اہل تشیع کے علماء سے مذاکرات کرتی رہیں۔ اسی دوران پاک چین اقتصادی راہداری (سی پیک) کے منصوبے پر دستخط کئے گئے جس کی مالیت 46 ارب ڈالر سے زائد ہے۔ اس منصوبے کا گیٹ وے گلگت بلتستان ہے اور اس پورے منصوبے کی سیکیورٹی کی ذمہ داری پاک فوج نے لے لی۔

Comments

comments

چینی ماہرین نے پاؤں کے متعلق عجیب تفصیلات بتا دی پڑھیے اس رپورٹ میں
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top