Urdu

گستاخ رسول کے ساتھ میں نہیں بیٹھ سکتا کوکب نورانی ۔ عامر لیاقت میزبانی چھوڑ کر اٹھ گئے

بول چینل کے رمضان ترانسمیشن میں اس وقت افسوسک ناک صورت حال پیدا ہوئی جب ایک انڈیا سے آدمی نے کال کی اور ایک اختلافی سوال پوچھ ڈالا ۔ اس کے بعد ایک عالم دین پر گستاخ کا فتوی لگا اور اسے شو سے بے عزت کرکے نکال دیا گیا /

تفصیلات کے مطابق عالم آن لائن جس کی میزبانی پاکستان کے متنازعہ ڈاکٹر عامر لیاقت کر رہے ہیں ان سے سوال پوچھا گیا کہ اگر نماز قضاء ہو جائے تو وتر سے پہلے تراویح پڑھی جاسکتی ہے،  ۔ اس پر عامر لیاقت نے ایک اور سوال پوچھنے کا کہا ۔ تو اس نے سوال کرتے ہوئے کہا کہ کیا حضرت علی کرم اللہ وجہہ کو خلافت ملی تھی ۔ اس پر عامر لیاقت بھڑک اٹھے اور کہا کہ یہ کیسا سوال ہے وہ تو خلفاء راشدین میں سے ہیں ۔ حالانکہ سوال یہ تھا کہ ان کو حضور سے خلافت ملی تھی جو کہ ایک متنازعہ موضوع ہے ۔ اس پر عامر لیاقت نے کہا کہ

تم لگتا ہے ذاکر نائیک کو کچھ زیادہ ہی سنتے ہو ۔ اور پھر قاری خلیل الرحمن کی طرف رجوع کرتے ہوئے پوچھا آپ کیا کہتے ہیں انہوں نے کہا کہ اگر اس نے یہ بات کی ہے تو نری جہالت ہے ۔ لیکن پہلے سے طے شدہ ،منصوبہ کے تحت فورا ویڈیو چلا دی گئی اور قاری خلیل الرحمن پر الزام لگایا گیا کہ وہ ڈاکٹر ذاکر نائیک کی طرف کر رہے ہیں ۔ پھر جو ڈرامہ ہوا وہ پوری قوم نے دیکھا ۔ حالانکہ یہی عامر لیاقت ہے جس نے صحابہ کرام رضوان اللہ اجمعین پر کھل کر تبرا کیا ہے ۔

آپ بھی ویڈیو دیکھیں اور بتائیں کہ کیا عامر لیاقت کا یہ انداز درست تھا اور کیا رمضان کے مہینہ میں ایسے پروگرام جس میں فقہی اختلاف اور فرقہ واریت کو ہوا دی جائے اس کو چلانا چاہئے ۔ تبصرہ کریں اور رائیں دیں

Comments

comments

گستاخ رسول کے ساتھ میں نہیں بیٹھ سکتا کوکب نورانی ۔ عامر لیاقت میزبانی چھوڑ کر اٹھ گئے
Click to comment

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *

To Top